’’فٹ بال کلب بارسیلونا‘‘ جسے عام طور پر ’’بارسیلونا‘‘ یا ’’بارسا‘‘ کہا جاتا ہے، ہسپانیہ کا ایک پیشہ ورانہ فٹ بال کلب ہے۔ فٹ بال کلب بارسیلونا، اسپین کے شہر بارسیلونا میں قائم ہے۔ یہ کلب ہسپانوی لوکل فٹ بال کی اے کیٹیگری کی لیگ جسے ’’لا لیگا‘‘ (La Liga) یا ’’اعزازی لیگ‘‘ بھی کہا جاتا ہے، کھیلتا ہے اور ان تین کلبوں میں شامل ہے جسے کبھی اس لیگ سے تنزلی (relegation) کا سامنا نہیں کرنا پڑا۔ ’’ٰفٹ بال کلب بارسیلونا‘‘ کے طور پر کلب کا قیام 1899 میں Joan Gamper کی قیادت میں سوئس، انگریز اور ہسپانوی فٹ بالرز کے ایک گروپ کے ذریعے ہوا۔ شہر بارسیلونا اسپین کے علاقے ’’قتئلونیہ‘‘ (Catalunya) میں واقع ہے۔

ہم وطن کلب ’’ریئل میڈریڈ‘‘ (Real Madrid ۔ رئال مادرید) کے ساتھ ان کی ایک عرصے سے رقابت چلی آرہی ہے۔ دونوں ٹیموں کو ایک دوسرے کا روایتی حریف مانا جاتا ہے۔ ان دونوں ٹیموں کے درمیان ہونے والے ہر میچ کو ’’کلاسیکو‘‘ (El Clasico) یعنی ’’کلاسیکل‘‘ یا ’’روایتی‘‘ میچ کہا جاتا ہے۔ جنرل فرانکو کے چالیس سالہ آمرانہ دور میں جب قتئلان قوم پر ہر قسم کی سیاسی اور غیر سیاسی پابندیاں تھیں تو قتئلان قوم بارسا فٹ بال کلب کے ذریعے ریئل میڈریڈ کے خلاف کھیلتے ہوئے جنرل فرانکو کے خلاف نفرت کے اظہار کے طور پر ’’بارسا‘‘ کو سارے قتئلونیہ میں بڑھ چڑھ کر پسند کرتے، کیونکہ ریئل میڈریڈ ﴿مادرید﴾ مرکز کی فوجی جنتا اور یورپ کے بدترین آمر فرانکو کی ٹیم سمجھی جاتی تھی۔ اس لیے فٹ بال کلب بارسیلونا قتئلونیہ کی ثقافت کی علامت بن گیا۔ یہ کلب ”Mes que un club” کہلانے لگا یعنی ’’ایک کلب سے بڑھ کر‘‘۔ بارسا کا قومی ترانہ ”Cant del Barca” ہے جسے Jaume Picas اور Josep Maria Espinas نے مشترکہ طور پر تحریر کیا۔ بارسیلونا فٹ بال کلب نسل پرستی کے خلاف ہے۔ بہت سے دیگر فٹ بال کلبز کے برعکس بارسیلونا کے مداح کلب کو چلاتے ہیں اور اس کے مالک تصور کیے جاتے ہیں۔ آمدنی کے لحاظ سے یہ کلب دنیا کا دوسرا امیر ترین فٹ بال کلب ہے۔ فیفا ورلڈ کپ دو ہزار دس جیتنے والی ٹیم اسپین کے بیشتر کھلاڑی اسی کلب سے منسلک ہیں۔ فائنل میچ میں اسپین کو ایک گول سے فتح دلا کر مین آف دی میچ کا اعزاز حاصل کرنے والے کھلاڑی آندرس اینیستا (Andres Aniesta) کا تعلق اسی کلب سے ہے۔ اپنے ’’شفاف کھیل‘‘ اور کھیلنے کے خوبصورت انداز کی وجہ سے بارسیلونا دنیا بھر میں مقبول ہے۔
مجموعی ٹرافیوں کی تعداد کے اعتبار سے فٹ کلب بارسیلونا، ہسپانوی فٹ بال کا دوسرا کامیاب ترین کلب ہے۔ جنھوں نے بیس لالیگا ٹائٹلز، ریکارڈ پچیس ہسپانوی کپ (Spanish Cup)، نو ہسپانوی سپر کپ (Spanish Super Cups) اور دو لیگ کپ جیتنے کا اعزاز حاصل کر رکھا ہے۔ یورپی فٹ بال میں بھی بارسیلونا ایک کامیاب ترین فٹ بال کلب کے طور پر جانا جاتا ہے۔ بارسیلونا نے یو ای ایف اے (UEFA) کے دس مقابلے جیت رکھے ہیں۔ یہ یورپ کا واحد کلب ہے جس نے براعظم یورپ کی سطح پر ہونے والے مقابلوں میں 1955 سے لے کر آج تک ہر سیزن میں حصہ لیا ہے۔ 2009 میں بارسیلونا، اسپین کا پہلا کلب بنا جس نے ’’تہرا‘‘ ٹائٹل (treble) جیتا ہو۔ اس سیزن میں بارسیلونا نے لا لیگا، کوپا ڈیل رے (Copa Del Rey) جسے اسپینش کپ یا اسپینش کنگ کپ بھی کہا جاتا ہے اور یوئیفا چیمپیئنز لیگ جیتی۔ اسی سال دنیا کے پہلے اور ابھی تک واحد کلب کے طور پہ بارسیلونا کو یہ اعزاز بھی حاصل ہوا کہ کسی کلب نے ایک سال میں چھ مختلف مقابلوں میں حصہ لیا اور چھ کے چھ ٹورنامنٹس جیت لیے۔ بارسیلونا نے پہلی تین ٹرافیاں جیتنے کے بعد اسپینش سپر کپ (Spanish Super Cup)، یو ئیفا سپر کپ (UEFA Super Cup) اور فیفا کلب ورلڈ کپ (FIFA Club World Cup) جیت کر سیزن میں اپنی چھ (sextuple) ٹرافیاں مکمل کیں۔ اس طرح ایف سی بارسیلونا واحد فٹ بال کلب ہے جس کے پاس یہ اعزاز ہے۔

کھلاڑی
قواعد و ضوابط کی رو سے ہسپانوی ٹیموں کو صرف تین غیر یورپی کھلاڑیوں کو کھلانے کی اجازت ہے۔ ٹیم میں شامل ہر کھلاڑی کی صرف بنیادی شہریت کو دیکھا جاتا ہے۔ کئی غیر یورپی کھلاڑیوں کے پاس یورپی شہریت کے ساتھ ساتھ دوہری شہریت ہوتی ہے۔ ہر دور میں دنیا کے مشہور اور بڑے فٹ بالرز نے بارسیلونا کی طرف سے کھیلا۔ جن میں Romario، Luis Figo، Ronaldo، Rivaldo، Xavi Hernandez، Carles Puyol، Samuel Eto’o، Ronaldinho اور Lionel Messi وغیرہ کے نام شامل ہیں۔

بارسیلونا کی ہوم شرٹ

 روایتی شرٹ
بارسا کا روایتی رنگ نیلا اور سرخ ہے۔ ان کی دھاری دار روایتی شرٹ جسے ’’ہوم شرٹ‘‘ (Home Shirt) کہتے ہیں، انہی دو رنگوں پر مشتمل ہوتی ہے۔ اسی وجہ سے انھیں ’’بلوگرانا‘‘ (Blaugrana) بھی کہا جاتا ہے یعنی نیلا اور گہرا سرخ۔ شرٹ کے ڈیزائن میں تبدیلی ہوتی رہتی ہے لیکن رنگ یہی رہتے ہیں۔ جبکہ ان کی اوے شرٹ (Away Shirt) ہر سیزن میں نئے رنگ اور ڈیزائن کی ہوتی ہے۔
دیگر کئی کلبوں اور قومی ٹیموں کی طرح بارسا فٹ بال کلب میں بھی 10 نمبر کی شرٹ کو خاص اہمیت دی جاتی ہے۔ یہ شرٹ ہمیشہ کلب کا بہترین کھلاڑی پہنتا ہے۔

La Masia
’’لامآسیا‘‘ ﴿لفظی معنی حویلی طرز، اولڈ اسٹائل وسیع اور کشادہ مکان﴾ کو فٹ بال کلب بارسیلونا کی نرسری سمجھا جاتا ہے جہاں سے کئی نامور فٹ کھلاڑیوں نے اپنے کھیل کا آغاز کیا۔ فٹ بال کی دنیا میں بارسیلونا کی کامیابی کے پیچھے اس تربیت گاہ La Masia de Can Planes جسے مختصراً La Masia کہا جاتا ہے، کا بڑا ہاتھ ہے۔ نوجوان فٹ بالرز کی یہ تربیت گاہ بارسیلونا ہی میں کلب کے اسٹیڈیم ’’کیمپ نیو‘‘ (Camp Nou) کے قریب واقع ہے۔ اس میں قریباً تین سو نوعمر کھلاڑی تربیت حاصل کر رہے ہیں۔ اسپین کی قومی فٹ بال ٹیم کی طرف سے کھیلنے والے کئی نامور کھلاڑی اسی تربیت گاہ کی دریافت ہیں۔ فیفا کی جانب سے سال 2010 میں دنیا کے بہترین کھلاڑیوں (FIFA World Player of the Year) کے طور پر منتخب تینوں کھلاڑی یعنی لیونل میسی (Lionel Messi)، آندرس اینیستا (Andres Iniesta) اور شاوی ہرناندز (Xavi Hernandez) اسی نرسری کی دریافت ہیں۔

کیمپ نیو کا ایک منظر

اسٹیڈیم
بارسیلونا کے ہوم گراؤنڈ کا نام ’’کیمپ نیو‘‘ (Camp Nou ۔ کمپ نیو) ہے اس کا انگریزی میں مطلب ”New Field” بنتا ہے لیکن اسے زیادہ تر ”The Nou Camp” ہی کہا جاتا ہے۔ یہ اسٹیڈیم اسپین کے شہر بارسیلونا میں قائم ہے۔ 1957 میں اپنی تعمیر سے لے کر آج تک یہ گراؤنڈ فٹ بال کلب بارسیلونا کے ہوم گراؤنڈ کے طور پر جانا جاتا ہے۔ اس میدان پر کئی بین الاقوامی میچیز کھیلے جا چکے ہیں جن میں یوئیفا چیمپیئنز لیگ کے دو فائنل میچ بھی شامل ہیں۔ اس اسٹیڈیم میں لگ بھگ ایک لاکھ تماشائیوں کے لیے سیٹس موجود ہیں۔ اس طرح گنجائش کے لحاظ سے یہ یورپ کا سب سے بڑا اور دنیا کا دسواں بڑا فٹ بال اسٹیڈیم ہے۔ سن 2000 تک اس میدان کا نام Estadi del FC Barcelona یعنی ’’ایف سی بارسیلونا اسٹیڈیم‘‘ تھا جب کلب کے ممبرز نے انتخابات کے ذریعے اس کے لیے مشہور نام ’’کیمپ نیو‘‘منتخب کیا۔ یوئیفا کے نئے ریٹنگ سسٹم کے تحت 2006 سے اس اسٹیڈیم کو ’’فائیو اسٹار‘‘ اسٹیڈیم کا درجہ حاصل ہے۔

کلاسیکو
دو بڑے ہسپانوی کلبز یعنی بارسیلونا اور ریئل میڈریڈ ایک دوسرے کے روایتی حریف مانے جاتے ہیں۔ بارسیلونا اور ریئل میڈریڈ دونوں ہی اسپین کے سب سے بڑے شہر ہیں۔ ان دونوں ٹیموں کے درمیان ہونے والے ہر میچ کو ’’کلاسیکو‘‘ (El Clasico) کہا جاتا ہے۔ دنیا بھر میں یہ میچ بہت شوق سے دیکھا جاتا ہے جس میں ہر بار کانٹنے کا مقابلہ دیکھنے کو ملتا ہے۔ دونوں ٹیموں کے درمیان لا لیگا (La Liga) یعنی اسپینش لیگ کے ایک سیزن (Season) میں دو میچ کھیلے جاتے ہیں۔ لیگ سسٹم (League System) کے حساب سے دونوں ٹیمیں ایک دوسرے کے گراؤنڈ پر جا کر ایک ایک میچ کھیلتی ہیں۔ اس کے علاوہ یہ بھی ممکن ہوتا ہے کہ دیگر مقابلوں میں بھی ٹیمیں ایک دوسرے کے آمنے سامنے آجائیں۔ دونوں ٹیموں کے شائقین اپنی ٹیموں سے بہت ہی جذباتی لگاؤ رکھتے ہیں۔

ڈربی
ہم شہر کلب ’’اسپانیول‘‘ (Espanyol) سے ہونے والے میچز El Derbi Barcelonin کہلاتے ہیں۔ ڈربی مقابلہ ہم پلہ، ہم شہر یا روایتی حریف جیسے ریئل میڈریڈ کے ساتھ اہم میچ کو بھی کہا جا سکتا ہے۔ اسپینش فٹ بال میں یہ میچ بھی بہت شوق سے دیکھا جاتا ہے۔

قومی ترانہ
فٹ بال کلب بارسیلونا کا قومی ترانہ ”Cant del Barca” ہے۔ 1974 میں کلب کی پچھترویں سالگرہ کے موقعے پر یہ ترانہ تیار کیا گیا۔ Jaume Picas اور Josep Maria Espinàs نے اس کے بول لکھے جب کہ اس کی موسیقی Manuel Valls نے ترتیب دی۔ پہلی دفعہ یہ ترانہ 27 نومبر 1974 کو ایف سی بارسیلونا اور ایسٹ جرمنی کی ٹیموں کے مابین ہونے والے میچ سے قبل کیمپ نیو میں پیش کیا گیا۔ 28 نومبر 1998 کو کلب کے سو سال مکمل ہونے پر کیمپ نیو میں منعقد کی گئی تقریب کے اختتام پر قتئلونیہ کے ایک مشہور گلوکار اور نغمہ نگار Joan Manuel Serrat نے اس ترانے پر اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔
ترانے کے الفاظ اس بات کی عکاسی کرتے ہیں کہ ہم نیلگوں اور سرخ لوگ، ہمیں اس سے کوئی غرض نہیں کہ کون کہاں سے آیا ہے، ہم ایک پرچم کے نیچے متحد ہیں، کھلاڑی اور حامی ہم سب مل کر ایک طاقت بن جاتے ہیں، ہمارا نام سب جانتے ہیں…. بارسا، بارسا، بارسا۔

مالی حالت
عام طور پر کلبز مختلف کمپنیوں کی تشہیر کے لیے ان کے لوگو اپنی شرٹ پر لگاتے ہیں جس کے عوض ان کو خطیر معاوضہ حاصل ہوتا ہے۔ جبکہ بارسیلونا کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ اپنے قیام سے لے کر سن 2010 تک اس نے کئی شاندار آفرز ٹھکراتے ہوئے کبھی کسی کمپنی سے معاہدہ نہیں کیا۔ 14 جولائی 2006 کو اعلان کیا گیا کہ ایف سی بارسیلونا نے اقوام متحدہ کے بچوں کے لیے قائم ادارے ’’یونیسیف‘‘ کا لوگو اپنی شرٹ پر لگانے کا معاہد کیا ہے۔ لیکن اس کی خاطر بارسیلونا کو یونیسیف سے کوئی رقم حاصل نہیں ہونی تھی بلکہ ایف سی بارسیلونا ہر سال ایک اعشاریہ پانچ ملین یورو یونیسف کو عطیے کی مد میں ادا کرے گا۔
بارسیلونا کی یہ ایک سو گیارہ سالہ روایت سیزن 2011-12 میں ختم ہوئی، جب انھوں نے قطر کی ایک کمپنی ’’قطر فاؤنڈیشن‘‘ سے پانچ سال کے لیے تیس ملین یورو کا معاہدہ کیا۔ اس وقت تک کا یہ سب بڑا اسپانسر شپ معاہدہ ہے۔ بارسیلونا کی طرف سے یہ بھی بتایا گیا ہے کہ یونیسیف کا لوگو بھی بدستور ایف سی بارسیلونا کی شرٹس پر موجود رہے گا۔
سن 2010 میں Forbes کی جانب سے 2008۔09 کے سیزن کی بنیاد پر بارسیلونا کی مالیت 752 ملین یورو ﴿ایک ہزار ملین امریکی ڈالر﴾ ظاہر کی گئی۔ رینکنگ میں بارسیلونا کو مانچسٹر یونائیٹڈ، ریئل میڈریڈ اور آرسنل کے بعد چوتھی پوزیشن پر رکھا گیا۔ کھیلوں کے معروف ادارے ای ایس پی این کا کہنا ہے کہ بارسیلونا اپنے کھلاڑیوںکو اوسطاً بھاری معاوضہ ادا کرنے والی دنیا کی سب سے بڑی ٹیم ہے۔

 منجانب … سنوکر نامہ ڈاٹ کام